قومی

  • قومی
  • Sep 07, 2018

آج ملک بھرمیں یوم فضائیہ منایا جا رہا ہے

آج ملک بھر فضائیہ کا دن منایا جاتا ہے۔ 1965 ء کی پاکستان بھارت جنگ میں جہاں پاکستان کی بری اور بحری افواج نے ناقابل فراموش کردار ادا کیا،وہیں پاک فضائیہ کا کردار بھی سنہرے حروف سے لکھے جانے کے قابل ہے۔6 ستمبر 1965ء کو جنگ کے پہلے ہی دن، پاک فضائیہ نے بری فوج کے شانہ بشانہ بڑا اہم کردار ادا کیا اور پٹھان کوٹ، آدم پور اور ہلواڑہ کے ہوائی اڈوں پر حملہ کرکے، دشمن کے 22 طیارے ، متعدد ٹینک، بھاری توپیں اور دوسرا اسلحہ تباہ کیا۔جنگ کا اگلا دن،سات ستمبر 1965ء کا دن تو پاک فضائیہ ہی کا دن تھا۔1965 ء کی جنگ میں اس روز پاک فضائیہ نے دشمن کو ایسی دھول چٹائی جس نے ایک نئی تاریخ رقم کی۔اس دن اگرچہ پاک فضائیہ کے طیارے سرگودھا کے ہوائی اڈے پر، طلوع آفتاب سے پہلے ہی بھارت کے ممکنہ حملے کے دفاع کے لئے تیار کھڑے تھے، مگر دشمن کا حملہ اس قدر ناگہانی تھا کہ حملے کا علم ان کی آمد کے بعد ہی ہوا، چنانچہ پاک فضائیہ کے طیاروں نے اپنا فریضہ بھرپور طریقے سے انجام دیا۔دشمن کے طیاروں کو نہ صرف فرار پر مجبور ہونا پڑا، بلکہ پاک فضائیہ کے طیاروں نے ان کا پیچھا کرتے ہوئے ان کے کئی طیارے مار گرائے۔اس کے بعد پاک فضائیہ نے دشمن کے ہوائی اڈوں پر جوابی حملہ کیا اور لدھیانہ، جالندھر، ممبئی اور کلکتہ کے ہوائی اڈوں پر حملہ کرکے مجموعی طور پر دشمن کے 31 طیارے تباہ کردیئے۔
7 ستمبر 1965 ء کو ایک منٹ سے بھی کم وقت میں دشمن کے پانچ جنگی طیاروں کو تباہ کرکے عالمی ریکارڈ بنانے والے سکوارڈن لیڈر ایم ایم عالم کے کارنامے زندہ و جاوید اوریوم فضائیہ کا خاصہ ہیں۔ جنگ کے ہیرو سکوارڈن لیڈر محمد محمود عالم نے دشمن کے9 جنگی طیارے مار گرائے، جن میں پانچ لڑاکا طیارے تو ایک منٹ سے بھی کم وقت میں تباہ کئے۔ انہیں بہادری کے صلے میں دو بار ستارۂ جرات سے نوازاگیا۔
بھارتی فضائیہ کے مورال کا یہ حال ہو گیا تھا کہ بھارتی طیارے، پاکستانی طیاروں کو دیکھ کر ہی رخ بدل لیتے تھے۔ متعدد بار بھارتی طیاروں نے تعداد میں زیادہ ہونے کے باوجود پسپائی اختیار کی۔پاک فضائیہ نے بھارتی فضائیہ کے خلاف اپنی کارروائی 6 ستمبر کو شام 5 بجے کے بعد شروع کی تھی اور 7 ستمبر کو شام 5 بجے سے پہلے وہ دشمن کے 53 طیارے تباہ کرکے ناقابل شکست فضائی برتری حاصل کرچکی تھی۔ اس کے بعد جنگ بندی تک، ماسوائے سرحدی جھڑپوں کے، بھارتی فضائیہ نے کبھی بھی پاک فضائیہ کے اس تسلط کو چیلنج نہیں کیا، جو اس نے فضاؤں میں پہلے ہی روز قائم کرلیا تھا۔ پاکستان کے لئے فضائی جنگ 6 ستمبر کو شروع کی گئی تھی جو پاک فضائیہ نے 7 ستمبر ہی کو جیت لی تھی۔