قومی

  • May 06, 2021

وزیراعظم عمران خان کا تین روزہ دورہ سعودی عرب : دو طرفہ تعاون سمیت معیشت ،تجارت، سرمایہ کاری،توانائی سمیت علاقائی اور عالمی امور پر گفتگو ہو گی

وزیراعظم عمران خان کل سے سعودی عرب کا تین روزہ سرکاری دورہ کریں گے۔ وزیراعظم عمران خان کو دورے کی دعوت ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے دی ہے۔ وزیراعظم کے ہمراہ اعلیٰ سطح کا وفد ہوگا جس میں وزیر خارجہ سمیت کابینہ کے دوسرے ارکان موجود ہونگے ۔
ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیراعظم سعودی قیادت کے ساتھ دو طرفہ تعاون سمیت معیشت ،تجارت، سرمایہ کاری،توانائی، پاکستانی ورک فورس کیلئے ملازمتوں کے مواقع اور سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں کی فلاح و بہبود سے متعلق مشاورت کریں گے۔دو طرفہ قیادت کے درمیان باہمی دلچسپی کے علاقائی اور عالمی امور پر تبادلہ خیال ہوگا۔ دورے کے دوران دونوں ملکوں کے درمیان کئی معاہدوں اور یاداشتوں پر دستخط متوقع ہیں۔
وزیراعظم عمران خان او آئی سی کے سیکرٹری جنرل ، ورلڈ مسلم لیگ کے سیکرٹری جنرل اور مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کی مساجد کے اماموں سے ملاقات کریں گی۔ وزیراعظم جدہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی سے ملاقات میں مختلف امور پر گفتگو بھی کریں گے۔
پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان تاریخی اور برادرانہ تعلقات ہیں، جن کی جڑیں باہمی عقیدے ، مشترکہ تاریخ اور تعاون پر مشتمل ہیں۔ پاکستان کی عوام خادمین حرمین شریفین کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ تمام علاقائی اور عالمی امور بالخصوص مسلم امہ کے مسائل پر دونوں ملکوں کی رائے میں یکسانیت اور ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔سعودی عرب جموں کشمیر کے او آئی سی رابطہ گروپ کا ممبر بھی ہے۔
سعودی عرب 20 لاکھ پاکستانیوں کا دوسرا گھر ہے جو دونوں ملکوں کی ترقی اور خوشحالی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔دونوں ملکوں کے درمیان اعلیٰ سطح کے دوروں کا مقصد پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان تعلقات میں مزید وسعتیں ، بلندیاں اور قریبی روابط پیدا کرنا ہے۔