بین الاقوامی

  • Jun 25, 2021

اقوام متحدہ کی لیبیا کے سیزفائر مانیٹرنگ میکانزم کی حمایت

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیوگوتریس نے لیبیا سے غیر ملکی افواج کے انخلا پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ سیز فائر معاہدے پر مکمل عمل درآمد لیبیا میں استحکام کے لیے خاصی اہمیت کا حامل ہے۔ انتونیوگوتریس نے لیبیا میں برلن II کانفرنس کو ایک ویڈیو پیغام میں کہا کہ اقوام متحدہ لیبیا کے سیزفائر مانیٹرنگ میکانزم کی حمایت کرنے کے لئے پرعزم ہے اور اقوام متحدہ کی جنگ بندی پر نظر رکھنے والوں کے ابتدائی گروپ کو جلد طرابلس میں تعینات کیا جائے گا۔ کانفرنس میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے پانچ مستقل ممبروں سمیت 17 ممالک اور چار بین الاقوامی تنظیموں نے شرکت کی۔
لیبیا کے عبوری وزیر اعظم عبد الحمید دبیبہ نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ لیبیا کو سنجیدگی سے لیں اور اس کی خودمختاری کا احترام کریں۔ انہوں نے کہا کہ غیر ملکی افواج کی وجہ سے لیبیا میں سیاسی عمل کو سیکیورٹی کے بڑے خطرات ہیں۔ انہوں نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ غیر ملکی افواج کے انخلا میں لیبیا کی مدد کریں۔
2011 میں قذافی حکومت کا تختہ الٹنے کے بعد سے لیبیا بدامنی کا شکار ہے۔ اقوام متحدہ کی ثالثی کے تحت تنازعہ میں شامل دونوں فریقوں نے گذشتہ سال اکتوبر میں اقوام متحدہ کے ذریعے جنگ بندی پر دستخط کیے تھے۔ اس سال 10 مارچ کو لیبیا کی عبوری حکومت قائم ہوئی۔ تاہم اقوام متحدہ کے مطابق لیبیا میں اب بھی 20 ہزار غیر ملکی فوجی موجود ہیں۔