بین الاقوامی

  • Jul 22, 2021

بھارت میں ہلاکتوں کے غلط اعداد و شمار پر شکوک شبہات : بھارتی وائرس ڈیلٹا 124ممالک میں پھیل چکا : ڈبلیو ایچ او

دنیا بھر میں کورونا وبا پر قابو پانے کیلئے موثر حفاظی اقدامات اور بڑے پیمانے پر ویکسی نیشن کی بدولت صورتحال میں نمایاں بہتری آئی ہے اور معمولات زندگی بحال ہونا شروع ہو گئے ہیں ۔ لیکن اسی اثنا میں بھارت میں حکومت کی جانب سےاپنے عوام اور عالمی برادری کو گمراہ کرنے اور 47لاکھ ہلاکتوں کو محض 4 لاکھ بتانے پردنیا بھر میں اعدادو شمار کے حوالے سے شکوک وشبہات کا اظہار کیا جانے لگا ہے۔اور لوگ بھارت جیسےچند دوسرے ممالک کی جانب سےبھی فراہم کردہ ڈیٹا پر اعتبار کرنے کو تیار نہیں۔
دریں اثنا عالمی ادارہ صحت نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہاکہ بھارتی وائرس ڈیلٹا 124ممالک میں پھیل چکا ہے اور اس سے نمٹنے کیلئے موثر اقدامات کی ضرورت ہے۔
ایک نئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ فائزر اور ایسڑازینیکا ویکسین کی دو خوراکیں کورونا کی ڈیلٹا قسم کے خلاف موثر ہیں۔
برطانوی خبرایجنسی نے نیو انگلینڈ جرنل آف میڈیسن میں شائع ہونے والی تحقیق کے حوالے سے بتایاکہ فائزر کی دو خوراکیں ڈیلٹا وائرس سے بچاؤ کے لیے 88 فیصد جبکہ الفا قسم کیلئے 93.7 فیصد موثر ہیں۔ایسٹرازینیکا کی دو خوراکیں ڈیلٹا وائرس کے خلاف سڑسٹھ فیصد اور الفا کیلئے 74.5 فیصد موثر ہیں۔
برسلز میں یورپی کمیشن کی ترجمان ڈانا سپینانٹ نےبتایا ہے کہ اب تک 20کروڑ یورپی باشندوں کی ویکسی نیشن کی جا چکی ہے ۔ترجمان نے کہا کہ اب تک یورپ کی 54عشاریہ سات فیصد نوجوان آبادی کو بھی کورونا ویکسین لگائی جا چکی ہے۔تاہم جرمنی میں وزیر صحت ژینس شپاہن نے خبر دار کیا ہے کہ ملک میں کورونا وبا ایک بار پھر شدت اختیار کرتی جا رہی ہے اور خطرہ ہے کہ ستمبر اور اکتوبر میں کورونا کیسز میں غیر معمولی اضافہ ہو جائے گا۔
چین نے عالمی ادارہ صحت کی جانب سے کووڈکے ماخذ کے حوالے سے مزید تحقیق کے منصوبے کو مسترد کردیاہے۔ بیجنگ میں چین کے نائب وزیر صحت زینگ ژی شن نےکہا کہ ڈبلیو ایچ او کی ٹیم پہلے ہی ووہان شہرکا دورہ کر چکی ہے۔ دوبارہ چین کو ملوث کرنا سیاست ہے جسے کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا۔